قبائلی علاقوں میں موجود بارودی سرنگیں کتنی خطرناک ہیں؟

قبائیل علاقوں میں بارودی سرنگوں سے درپیش خطرات یہ تحقیقاتی کہانی افغان سرحد پر واقع دہشت گردی اور انتہاء پسندی سے متاثرہ قبائلی علاقوں میں موجودہ بارودی سرنگوں کے بارے میں جہاں پر بڑے پیمانے وہاں کے انسانی آبادی کو بہت بڑا خطرہ لاحق ہے۔ کئی سال اپنے علاقے سے باہر مشکل زندگی گزرنے کے بعد دہشت گردوں سے پاک قرار دئیے جانے والے یہ بے گھر لوگ جب اپنے علاقوں میں چلے گئے تو وہاں پر معاشی، تباہ شدہ مکانات، آمدورفت اور دیگر مسائل کے ساتھ بڑا خطرہ وہاں پر موجود زیر زمین بارودی سرنگیں ہیں۔ تحقیق سے یہ بات سامنے آیا کہ ان واقعات میں بڑے پیمانے خواتین اور بچے نشانہ بن رہے ہیں۔ متاثرہ افراد کے اعضاء کاٹ دئیے جاتے ہیں اور بعض لوگ مرجاتے ہیں۔ کسی بھی سرکاری ادارے کے ساتھ پاس واقعات کے اعداد شمار موجود نہیں، متاثرافراد کے علاج معالجے میں شکایت موصول ہوتے ہیں اور مصنوعی اعضاء کے فراہمی میں مسائل موجود ہے۔ اس کہانی کا بنیادی مقصد بارودی سرنگوں سے بچاؤ کے حوالے سے احتیاط، ان کے صفائی اور متاثر ہ افراد کے علاج معالجے کے حوالے آگاہی پیدا کرنا ہے۔ متاثرہ افراد کے بحالی میں آئی سی آر سی بھی صوبائی حکومت کی مدد کررہاہے۔

SEE NOMINATION →