شہری شعور: اب ہمیں بدلنا ہوگا ہر جانب ابلتے ہوئے گٹراور بکھرا ہوا کچرا،بے ہنگم ٹریفک،تجاوزات کی بھرمار،پانی کازیاں،بلا سوچے سمجھے درختوں کی کٹائی وغیرہ کے مظاہر ہم سے مثبت کاوش کا مطالبہ کررہے ہیں

شہری شعور: اب ہمیں بدلنا ہوگا ہر جانب ابلتے ہوئے گٹراور بکھرا ہوا کچرا،بے ہنگم ٹریفک،تجاوزات کی بھرمار،پانی کازیاں،بلا سوچے سمجھے درختوں کی کٹائی وغیرہ کے مظاہر ہم سے مثبت کاوش کا مطالبہ کررہے ہیں

Media Category: Print
Media Organization: Daily Jang, Karachi
By: Rizwan Ahmed

کبھی کبھی یوں محسوس ہوتا ہے کہ بہ حیثیت قوم ہمارا اجتماعی شعور مردہ ہوچکا ہے۔ہم میں سے ہر فرد اجتماعی ذمے داریوں کے شعور سے بے بہرہ ہوچکا ہے اور اسے یہ پتا ہی نہیں کہ اس کا کون سا عمل ملک وقوم اور خود اس کے لیے کتنا نقصان دہ ہے۔اس بے حسی کی بہت سی مثالیں روزانہ ہمارے سامتے آتی رہتی ہیں۔
چند ہفتے قبل سماجی رابطوں کی سائٹس پر کراچی کی ایک خاتون کی وڈیو بہت پھیلی تھی۔اس میں دکھایا گیا تھا کہ متموّل لوگوں کے ایک علاقے میں خاتون اپنی گاڑی سے اُترتی ہیں اور سڑک کے کنارے لگا ایک پودا جڑ سے اکھاڑ کر اسے اپنے ساتھ گاڑی میں لے جاتی ہیں۔
اسی طرح جہاں گاڑی کھڑی نہ کرنے کا بورڈ لگا ہو عین اس کے پاس گاڑی کھڑی کردی جاتی ہے۔جہاں تھوکنےپر پابندی کا بو رڈ نصب ہوتا ہے عین اس کے نیچے اور ارد گرد پان کی پیک کے بڑے بڑے نشانات نظر آتے ہیں،وغیرہ وغیرہ۔
یہ سب مناظر اس نکتے کی جانب اشارہ کرتے ہیں کہ قوم کے زیادہ تر افراد میں شہری شعور (سِوک سینس)نام کی کوئی شئے نہیں ہے۔

Nominated Work

شہری شعور: اب ہمیں بدلنا ہوگا ہر جانب ابلتے ہوئے گٹراور بکھرا ہوا کچرا،بے ہنگم ٹریفک،تجاوزات کی بھرمار،پانی کازیاں،بلا سوچے سمجھے درختوں کی کٹائی وغیرہ کے مظاہر ہم سے مثبت کاوش کا مطالبہ کررہے ہیں

Click Here To View The Nominated Work
Click Here To View The Nominated Work
Click Here To View The Nominated Work
Click Here To View The Nominated Work